Monday, 24 August 2015

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے رواں برس بغیر اجازت حج کی کوشش کرنے والوں سخت سزاؤں کی منظوری دے دی ہے۔ عرب ویب سائیٹ العربیہ کے مطابق سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے رواں برس عازمین حج کے لئے نیا ضابطہ اخلاق جاری کردیا ہے، جس کے تحت مقامات مقدسہ میں داخل ہونے والے ہر عازم کے پاس حکومتی اجازت نامہ ہونا لازمی ہو گا۔ کسی بھی شخص کو مقامی یا غیر ملکی کی مدد سے حج کرنے کی اجازت نہیں ہوگی کیونکہ مقامی اوروہاں موجود غیر ملکی بھی حکومت کی اجازت کے بغیر کسی کو حج کرانے کے مجاز نہیں ہیں۔ سعودی وزارت داخلہ نے خبردار کیا ہے کہ حج کے لئے جاری ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے والوں کو سزائیں دی جائیں گی۔ حکومتی اجازت کے بغیر حج کے ارادے سے عازمین حج میں شامل ہونے والے افراد کو جرمانہ، املاک کی ضبطگی اور ملک سے بے دخلی جیسی سزائیں دی جاسکتی ہیں۔ سعودی عرب میں ہر سال حج کے موقع پر غیر قانونی طریقے سے حجاج میں شامل ہونے والے لوگوں کو روکنا ایک بڑا مسئلہ رہا ہے۔ سعودی حکومت نے ضابطہ اخلاق پر عمل کو سخت بنانے کے لئے فنگر پرنٹس کا نظام متعارف کرایا ہے جس کی مدد سے بڑی تعداد میں ایسے لوگوں کی نشاندہی میں مدد ملتی ہے جو جعلی طریقے سے حج کی کوشش کرتے ہیں۔ گزشتہ سال حکومت کی اجازت کے بغیر حج کی کوشش کر نے والے 2 لاکھ 20 ہزار افراد کی نشاندہی ہوئی تھی جنہیں حج کے ارکان کی ادائیگی سے روک دیا گیا تھا۔


If You Like This Post. Please Take 5 Seconds To Share It.

comments please

Follow by Email

SEND FREE SMS IN PAKISTAN