Friday, 4 April 2014

وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف خان نے انکشاف کیا ہے کہ حکومت سعودی عرب نے اس سال پوری دنیا کے حجاج کے لئے سعودی عرب میں 40 روز کے لئے کھانے کے پیکج کا حصول لازمی قرار دے دیا ہے۔ حکومت پاکستان نے پاکستانی حجاج کو اس پابندی سے مستثنیٰ قرار دینے کی درخواست کی لیکن اس درخواست کو پذیرائی حاصل نہیں ہوئی تاہم انہوں نے سعودی سفیر عبد العزیز ابراہیم الغدیر سے استدعا کی کہ پاکستانی حجاج کو اس پابندی سے مستثنیٰ قرار دیا جائے کیونکہ پیکج کے تحت ملنے والا کھانا پاکستانی ٹیسٹ کے مطابق نہیں ہوتا۔ انہوں نے یہ بات حج آرگنائزر ایسوسی ایشن آف پاکستان اسلام آباد (ہوپ) کی ایوارڈز کی تقسیم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ وفاقی وزیر مذہبی امور نے کہا کہ حج ایک مقدس فریضہ ہے وزارت مذہبی امور میں کرپشن برداشت نہیں کی جائے گی اگر کوئی شکایت ہو تو مجھ سے براہ راست رابطہ قائم کیا جائے۔ سعودی عرب کے سفیر عبد العزیز ابراہیم الغدیر نے کہا کہ پاکستانی حجاج سعودی عرب میں غیر ملکی نہیں سعودی عرب ان کا اپنا ہی ملک ہے‘ سعودی عرب حجاج کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گا۔ اسلام آباد اور کراچی میں ویزا سیکشن میں ویزا کی سہولت میں اضافہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ میرے دروازے ہر وقت اہل پاکستان کے لئے کھلے ہیں۔ وفاقی وزارت مذہبی امور کے سابق سیکرٹری آغا رضا قزلباس نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کے دور میں وزارت مذہبی امور میں کرپشن ختم کر دی گئی۔

If You Like This Post. Please Take 5 Seconds To Share It.

comments please

Follow by Email

SEND FREE SMS IN PAKISTAN