Friday, 4 April 2014

ملائشیاءحکومت اور پاکستانی سفارتخانہ کے درمیان معاہدہ سے3 ہزارسے زائد غیر قانونی مقیم پاکستانیوں کی باعزت وطن واپسی کی راہ ہموار ہو گئی، ملائشین امیگریشن نے پاکستان ہائی کمشن کی درخواست پر غیر قانونی باشندوں پر فی کس جرمانہ ایک لاکھ سے کم کرکے 15ہزار روپے کر دیا، ملائشیا میں پھنسے 12مریض اور 25 خواتین و بچوں سمیت 100افراد وطن واپس پہنچ گئے، نو تعینات ہائی کمشنر اور کمیونٹی ویلفیئر اتاشی نے جیلوں میں قید 250 پاکستانی قیدیوں کی امداد کیلئے ملائشین حکام سے ملاقاتیں کیں، ملائشیا میں لاپتہ صحافی شہزاد مرزا کی معلومات کیلئے پاکستان ہائی کمشن کی ہنگامی کوششیں جاری ہیں۔ قانونی دستاویزات نہ ہونے پر انکی گرفتاری کا امکان ہے۔ تفصیلات کے مطابق ملائشیا میں 10لاکھ سے زائد غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف کریک ڈاو¿ن میں 250 پاکستانی تارکین وطن گرفتار ہوئے اس حوالہ سے نو تعینات پاکستانی ہائی کمشنر سید حسن رضا اور کمیونٹی ویلفیئر اتاشی سید اظہر ہاشمی نے ہنگامی طور پر ملائیشین امیگریشن حکام سے ملاقاتیں کیں ہیں۔ اور تارکین وطن کی باعزت واپسی اور جرمانہ ایک لاکھ روپے سے کم کر کے 1500روپے فی کس ادا کرنے کا معاہدہ کیا جس پر پاکستانیوں میں سے 1600کے قریب افراد نے پاکستان ہائی کمشن میں درخواستیں جمع کروائیں جن کی باعزت واپسی کیلئے کمیونٹی ویلفیئر اتاشی رات گئے تک اپنے دفتر میں مصروف رہتے ہیں۔ سید اظہر ہاشمی نے بتایا اب تک 100کے قریب غیر قانونی افراد پاکستان واپس بھیج چکے ہیں۔ ملائشین امیگریشن کی طرف سے گرفتار کئے گئے غیر قانونی مقیم محمد یوسف نامی شخص پر فالج کا حملہ ہوا جس کے علاج کے اخراجات حکومت پاکستان نے 21 ہزار رنگٹ ہسپتال میں جمع کروائے۔ جن گرفتار پاکستانی تارکین وطن کو ملائشیا کی عدالتوں نے قید اور جرمانوں کی سزائیں سنائی ہیں وہ ملائشیا کے قانون کے مطابق سزاو¿ں کے بعد ہی وطن واپس جا سکیں گے۔

If You Like This Post. Please Take 5 Seconds To Share It.

comments please

Follow by Email

SEND FREE SMS IN PAKISTAN